پی پی، مسلم لیگ، پی ٹی آئی کو عوام نے بار بار آزما لیا، اب مسترد کرنا ہوگا، لیاقت بلوچ

کوئٹہ  نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان،مرکزی الیکشن سیل کے چیئرمین لیاقت بلوچ نے کوئٹہ، کچلاک، قلعہ سیف اللہ، ژوب میں وفودسے ملاقاتوں،تقاریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ کے آئین اور عوام کے جمہوری حقوق کی حفاظت کے لیے مضبوط دوٹوک فیصلے نے یکدم ملک میں انتخابات کے انعقاد کو یقینی بنانے کا ماحول پیدا کردیا ہے۔

انتخابات کے التوا کی کوئی بھی کوشش آئین اور جمہوریت کو سبوتاژ کرنے کے مترادف ہے۔ ابنارمل سیاسی حالات میں بھی انتخابات کا انعقاد جمہوری قوتوں کے لیے ہی فائدہ مند ہوگا۔ غیرجانبدارانہ، صاف شفاف انتخابات کے لیے قومی سیاسی جمہوری قیادت اسٹیبلشمنٹ سے بھیک مانگنے، الگ الگ احتجاج کے بجائے قومی ترجیحات پر یک آواز اور یک عمل ہوں۔ عدلیہ، وکلا، سیاسی، دینی و سماجی محاذ کی تقسیم اور زہریلی پولرائزیشن نے اسلامی جمہوریہ پاکستان کو تماشا بنادیا ہے۔ 8 فروری 2024ءانتخابات کے انعقاد، غیر جانبدارانہ اور اسٹیبلشمنٹکی مداخلت سے آزاد انتخابات، آئین و جمہوریت کی حفاظت کے لیے جماعت اسلامی جدوجہد جاری رکھے گی۔

لیاقت بلوچ نے کہا کہ عوام کو اب یقین ہوچکا ہے کہ پی پی پی، مسلم لیگ، پی ٹی آئی اور نام نہاد الیکٹیبلز بار بار آزمائے جاچکے، اب ووٹرز کو اصول، اخلاقیات اور مستحکم جمہوریت کے لیے دھڑوں، مفادپرستی کے خوفناک گروہوں کو مسترد کرنا ہوگا۔ اسٹیبلشمنٹ اور اقتدار کے لالچی گروہوں کا قوم کو تقسیم کرنا اور اقتدار چلانا فرسودہ فارمولہ ہے۔ جماعت اسلامی ہی ملک کو بحرانوں سے نکالنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔ جماعت اسلامی کے مرکزی پارلیمانی بورڈ نے ضلعی، صوبائی بورڈز کی سفارشات پر امیدواران کے حتمی فیصلے کردیے ہیں۔ کارکنان ملک گیر انتخابی مہم چلاکر 2024 انتخابات کے لیے ووٹرز کو اسلامی، خوشحال، مستحکم اور کرپشن فری پاکستان کے لیے ترازو نشان پر مہر لگانے کے لیے آمادہ کریں گے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.