بلوچستان میں اساتذہ اور ڈاکٹروں کی یونینوں کا کام صرف بلیک میلنگ ہے، سرفراز بگٹی

کوئٹہ پاکستان پیپلز پارٹی ڈیرہ بگٹی کے نامزد امیدوار و سابق نگران وزیر داخلہ سینیٹر میر سرفراز بگٹی نے کہا ہے کہ انتخابات قریب آرہے ہیں ملک بھر کی طرح بلوچستان کے عوام بھی بھر پور طور پر انتخابات میں حصہ لیں گے کمیشن مافیا بلوچستان کی ترقی میں بڑی روکاوٹ ہے بلوچستان کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے عوام کے تعاون سے برسر اقتدار آکر بلوچستان کے عوام کی محرومیوں کا خاتمہ کریں گے

ان خیالات کا اظہار انہوں نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا میر سرفراز بگٹی کا کہنا تھا انہوں نے کہا کہ ہم نے باپ دادا کے دور سے فیڈریشن کی سیاست کی اس لیے میں نے فیصلہ کیا کہ میں پاکستان لیول کی ایک پارٹی میں شمولیت کرلوں دوستوں سے مشاورت کے بعد پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کی ایک سوال کے جواب میں میر سرفراز بگٹی کا کہنا تھا کہ سب سے پہلے میں وزیر اعلی کا امیدوار نہیں ہوں پاکستان پیپلز پارٹی کے ورکر کے حیثیت سے خدمت کرتا رہوں گا پاکستان کی خدمت کرتا رہوں گا ڈیرہ بگٹی سمیت بلوچستان کے بہت سے علاقوں میں امیدوار وں کیلئے مشکلات ضرور ہیںاٹھارویں ترمیم کا یہ فائدہ ہے کہ ہم اپنے فیصلے خود کرسکیں

انہوں نے کہا کہ باپ پارٹی کے بعد ہم نے فیصلہ کیا کہ ہم فیڈریشن کی جماعت میں شمولیت اختیار کریں اس لیے پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کی ایک سوال کے جواب میں کہا کہ اگر عوام نے مجھ پر اعتماد کیا تو سب سے پہلے میں بد عنوانی کی خاتمہ کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھاوں گا اور اس کمیشن مافیا کا خاتمہ کرکے ہی بلوچستان ترقی کرسکتا ہے صرف کرپشن کو اگر بلوچستان سے نکالا جائے تو بلوچستان زندگی کے ہر شعبہ میں ترقی کی راہ پر گامزن ہوگا

انہوں نے کہا کہ ہمارے صوبہ میں اساتذہ کی یونین ڈاکٹروں کی یونین ان کا کام صرف بلیک میلنگ ہے ان کا خاتمہ کرکے ہی ہم بلوچستان کو ترقی کی راہ پر گامزن کر سکتے ہیں انہوں نے کہا کہ جب میں ڈاکٹر مالک اور نواب ثنا اللہ زہری کے دور میں ہوم منسٹر تھا تو ہم نے لیویز کو پولیس میں کنورٹ کردیا حالانکہ ایک چلینج تھا لیکن جب کام کرنا ہو تو پھر مشکلات خود بخود حل ہوتے ہیں ہم نے کوشش کی کہ پورے بلوچستان میںکوئی ایس ایچ او کسی سیاسی لیڈر کی سفارش پر اپوائنٹ نہیں ہوگا

Leave A Reply

Your email address will not be published.