بلوچستان میں شدید سردی ، کوئٹہ کی ہنہ جھیل جم گئی، قلات میں منفی 6 ، عوام گیس کی سہولت سے محروم14

کوئٹہ، قلات   صوبائی دارالحکومت سمیت بلوچستان کے شمالی علاقے شدید سردی کے لپیٹ میں ہے بارش اور پہاڑوں پر برفباری کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا درجہ حرارت نقطہ انجماد سے گرنے کے باعث کوئٹہ کے نواح واقع تفریحی مقام ہنہ جھیل بھی جم گئی کوئٹہ اور دیگر علاقوں میں گیس پریشر میں کمی اور بندش کی وجہ سے علاقہ مکینوں کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑرہا ہے

دوسری جانب سوئی سدرن گیس کمپنی کی جانب سے مختلف علاقوں اور مقامات پر گیس پائپ لائن کی مرمت کے سلسلے میں گیس بند کرنے کا اعلان کیا ہے صوبائی دارالحکومت کوئٹہ اور نواحی علاقوں میں شدید کے دوران گیس پریشر میں کمی اور بجلی کی بندش کی وجہ سے شہریوں کو مشکلات درپیش ہیں۔ جبکہ ایل پی جی گیس اور سوختنی لکڑی کی قیمتیں بھی عام آدمی کی پہنچ سے دور ہےں۔ عوامی حلقوں نے نگران حکومت اور اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ شدید سردی میں گیس پریشر میں کمی اور بجلی کی بندش کا نوٹس لیتے ہوئے گیس اور بجلی کی بلا تعطل فراہمی کو یقینی بناکر عوام کو ان مسائل سے چھٹکارا دلایا جائے۔

گزشتہ روز قلات میں بارش اور سیاحتی مقام کوہ ہربوئی سمیت پہاڑوں پر اور دیہی علاقوں میں برفباری کے سرد ہواں کے باعث سردی میں مزید اضافہ ہوگیا، پارہ منفی 6 تک گرگیا، خون جما دینے والی سردی میں بھی گیس مکمل غائب رہی، عوام کو مشکلات، شدید سردی میں بازاریں اور سڑکیں ویران نظر آنے لگی کاروبار زندگی متاثر جبکہ لوگ گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز قلات شہر سمیت دیگر دیہی علاقوں میں بارش کے ساتھ پہاڑی علاقوں میں برفباری ہوئی جس کے بعد سرد ہواں نے ڈھیرے ڈال دیئے محکمہ موسمیات کے مطابق قلات میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران درجہ حرارت منفی چھ ریکارڈ کی گئی، شدید سردی میں گیس مکمل غائب جبکہ بجلی کی آنکھ مچولی جاری، شدید سردی میں گیس پریشر بدستور مکمل بند ہے جس سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے قلات میں گیس بندش اور بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے نوٹس لینے کا مطالبہ بھی کیا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.