الیکشن ٹریبونلز میں اعتراضات پر سماعت، جام کمال کیخلاف دائر پانچوں اپیلیں غیر موثر قرار

کوئٹہ  کوئٹہ الیکشن ٹریبونلز نے چھٹے روز بھی کاغذات نامزدگی مسترد کئے جانے اور مختلف اعتراضات پر سماعت کی ، الیکشن ٹریبونل نے سابق وزیر اعلی جام کمال کے خلاف دائر پانچوں اپلیں غیر موثر قرار دیکر خارج کر دیں ، مخالف فریق نے جام کمال کے خلاف اقامہ رکھنے کا اعتراض اٹھایا تھا ،

الیکشن ٹریبونل نے سابق وزرا اعلی سردار اختر مینگل اور نواب ثنا اللہ زہری کے خلاف دائر سماعت 8 جنوری جبکہ پی ٹی آئی کی خاتوں امیدوار منورہ منیر کی اپیل پر سماعت 9 جنوری کے لئے مقرر کر دی ،الیکشن ٹریبونل نے این اے 264 کوئٹہ 3 پر نیشنل پارٹی کے امیدوار عطا محمد بنگلزئی کو بھی الیکشن لڑنے کی اجازت دیدی، الیکشن ٹریبونل نے این اے 262سے پی ٹی آئی کے محمدشریف جوگیزئی جبکہ پی ٹی آئی کے ہی حبیب اللہ کاکڑ کو چار صوبائی حلقوں 39 44 45 اور 46 سے الیکشن لڑنے کی اجازت دیدی،چھٹے روز دونون ٹریبونلز نے 75 کیسز کی سماعت کی ،الیکشن ٹربیونل ون کے جج جسٹس ہاشم نے17 کیس کی سماعت کی ٹربیونل نے 3 امیدواروں کو الیکشن لڑنے کی اجازت دی،

ایک اپیل مسترد، 5 اپیل خارج کردیں،ٹربیونل نے 8 فریقین کو نوٹسز جاری کئے،الیکشن ٹربیونل ٹو کے جج جسٹس محمدعامر نواز رانا نے 58 اپیلوں کی سماعت کی،ٹربیونل نے 44 امیدواروں کو الیکشن کے لئے اہل قرار دے دیا،ٹربیونل نے 8اپیلوں پر فیصلہ محفوظ کرلیا،الیکشن ٹربیونل ٹو نے 6 اپیلوں پر فریقین کو جواب طلبی کے نوٹسز جاری کردئیے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.